جنوبی پنجاب کی ترقی کے لئے اقدامات

تحریر:آصف شہزاد
پنجاب حکومت نے جنوبی پنجاب کی 72 سالہ محرومیوں کے خاتمہ کے لئے وسائل کا رخ جنوبی پنجاب کی طرف موڑ دیاہے، جس سے پسماندگی کا خاتمہ اور ترقی کے نئے دور کا آغاز ہو گیا ہے۔جنوبی پنجاب میں ترقی کی نئی راہیں ہموار ہونے لگی ہیں۔ حال ہی میں ڈی جی خان چیمبر کے وفد نے وزیراعلیٰ پنجاب سے ملاقات میں جنوبی پنجاب میں نئی صنعتوں کے قیام اور صنعت و تجارت کے فروغ پر تبادلہ خیال کیا۔ اس کے ساتھ ساتھ ڈی جی خان، تونسہ، وہوا اور سخی سرور میں لنگر خانے قائم کرنے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔ خواجہ جلال الدین رومی اور دیگر صنعتکار لنگر خانے کھولنے کے انتظامات کریں گے۔ ڈیرہ غازی خان میں سخی سرور روڈ پر سمال اینڈ میڈیم انڈسٹریز کے لئے 50 ایکڑ اراضی مختص کی گئی ہے۔چھوٹے اور درمیانے صنعتکاروں کو آسان اقساط میں صنعتی پلاٹ دیئے جائیں گے۔

مظفر گڑھ میں سپیشل اکنامک زون میں سرمایہ کاروں کو مراعات دی جائیں گی۔ڈیرہ غازی خان چیمبر آف کامرس کے قیام کے لئے بھرپور تعاون کیا جائے گا۔ویسٹ مینجمنٹ کمپنی اور پارکس اینڈ ہارٹی کلچر اتھارٹی قائم ہو چکی ہیں۔ تاجروں اور صنعتکاروں کی سہولت کے لئے ڈیرہ غازی خان کی اندرونی سڑکوں کو بہتر بنایا جائے گا۔ تاجروں اور صنعتکاروں کی راہ میں سرخ فیتہ حائل نہیں ہونے دیں گے۔ جنوبی پنجاب میں صنعتیں قائم ہونے سے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔پنجاب میں کاٹیج بزنس ہاؤسنگ کا تصور متعارف کرایا جائے گا۔ کاٹیج بزنس ہاؤسنگ کے تحت ایک ہی جگہ پر کام اور رہائش میسر ہوگی۔ خواتین کو خود روزگار کے مواقع اور ہائش بھی ملے گی۔ قائداعظم بزنس پارک کو ماڈل سپیشل اکنامک زون کے طور پر ڈویلپ کیا جا رہا ہے۔بجلی، پانی اور دیگر سہولتوں کی فراہمی کا عمل جلد مکمل کر لیا جائے گا۔ قائداعظم بزنس پارک کو موٹروے سے منسلک کرنے کے لئے انٹرچینج کی تعمیر کے لئے ایم او یو سائن ہو چکا ہے۔ جنوبی پنجاب میں صنعتی ترقی کے پوٹینشل کو پوری طرح استعمال کیا جائے گا۔ پسماندہ علاقوں میں صنعت و تجارت کے فروغ سے ترقی کا انقلاب لانا چاہتے ہیں اور روز گار کے مواقع پیدا کرنا حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے۔

ڈی جی خان چیمبر کے صدر خواجہ جلال الدین رومی نے کہا کہ ملتان کے بعد ڈیرہ غازی خان میرا دوسرا گھر ہے کہ اس علاقے کے سینکڑوں افراد ہمارے مختلف منصوبوں میں کام کر رہے ہیں جس وجہ سے ضلع ڈیرہ غازی خان میں بے روزگاری ختم کرنے میں ہمارا بھی کردار ہے۔انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب کے اقدامات پر خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ تاجر برادری کے لئے وزیراعلیٰ عثمان بزدار کا جذبہ قابل ِ تحسین ہے۔ ڈیرہ غازی خان میں بے روزگاری کے خاتمہ کے علاوہ، نئی صنعتوں کے قیام کے لئے اقدامات کا ذکرکرتے ہوئے خواجہ جلال الدین کا کہنا تھا کہ کورونا کی وجہ سے ملک کا کاروباری طبقہ پہلے ہی مسائل کا شکار ہے۔ایسی صورت میں ہمارا یہ مشن ہے کہ پہلے بند انڈسٹری کو فعال کیا جائے اس کے بعد نئے کاروباری مواقع پیدا کرنے کے لئے حکومت کے تعاون سے انڈسٹری کے فروغ کے لئے دن رات کام کیا جائے تاکہ علاقے میں صحت مند کاروباری ماحول کو فروغ مل سکے۔ سی پیک منصوبے کے تحت ڈیرہ غازی خان کو لنک کر کے یہاں پر ایک طرف بیروزگاری کے خاتمے میں کمی واقع ہو گی تو دوسری جانب علاقے میں نئے کاروباری مواقع پیدا ہوں گے۔

خواجہ جلال الدین رومی نے کورونا وبا میں چین سے درآمد شدہ حفاظتی سامان نشتر ہسپتال انتظامیہ کو فراہم کرتے ہوئے کہا کہ محمود گروپ آف کمپنیز نے ماضی کی طرح آج بھی مشکل کی اس گھڑی میں اپنی شاندار روایات کو قائم رکھا ہے اور فرنٹ لائنرز کے لئے حفاظتی سامان مہیا کیا ہے، جبکہ آنے والے دنوں میں ڈاکٹرز، نرسز اور پیرا میڈیکل اسٹاف کے علاوہ نچلے عملے کی حوصلہ افزائی کے لئے بھی اقدامات کیے جائیں گے۔ تاریخ کے اس نازک ترین دور میں انہوں نے اپنے عوام اور ہیلتھ سٹاف کو ہر ممکن سہولیات فراہم کرنے کے لئے کوئی کسر اٹھا نہیں رکھی۔پنجاب حکومت نے تاجر اور صنعتکار برادری کے لئے بزنس فرینڈلی ماحول فراہم کیا ہے۔پنجاب میں بزنس فرینڈلی ماحول پیدا ہونے سے ایکسپورٹ میں اضافہ ہو رہا ہے۔ بزنس کمیونٹی حکومت پنجاب کے کورونا ریلیف پیکیج اور دیگر اقتصادی اقدامات کو سراہتی ہے۔جنوبی پنجاب کے پسماندہ علاقوں میں سوشل سیکٹر کی ترقی کے لئے تاجروں کو بھی چاہئے کہ حکومت سے بھرپور تعاون کریں۔تاجر برادری کوہ سلیمان میں بلوچستان کے سرحدی علاقوں میں ہیلتھ اور ایجوکیشن کے منصوبوں میں بھی معاونت کرے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں