شہری کے ساتھ تنازع، اسلام آبادہائیکورٹ کی کنول شوزب کے وکیل کو معاملہ حل کرنے کی ہدایت

اسلام آباد.اسلام آبادہائیکورٹ نے کنول شوزب کے وکیل کوشہری کے ساتھ معاملہ حل کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے رکن قومی اسمبلی کیخلاف مقدمہ درج کرنے سے روکنے کے حکم میں 27 جنوری تک تو سیع کردی،عدالت نے وکیل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہاکہ دو ہمسائیوں کا معاملہ ہے اچھا نہیں ہوا کہ ایشو یہاں تک پہنچ گیا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ میں کنول شوزب اور شہری میں تنازعہ سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی،کنول شوزب کے وکیل نے شہری کے ساتھ معاملہ حل کرنے پر رضا مندی ظاہر کردی،وکیل شاہ خاور نے کہاکہ عدالت کچھ وقت دے ہم اس ایشو کے حل کیلئے تیار ہیں، چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ ہم نے دیکھا ہے ایف آئی اے نے جس طرح اختیار کا غلط استعمال کیا، عدالت ابھی تک معاملے میں کوئی آرڈر جاری کرنے سے تحمل کا مظاہرہ کر رہی ہے۔

چیف جسٹس ہائیکورٹ نے کہاکہ ایف آئی اے ہتک عزت کے معاملہ کو کیسے دیکھ سکتا ہے اس کیلئے تو الگ قوانین ہیں،عدالت نے استفسار کیاکہ آج تک ایف آئی اے نے عام آدمی کے اس طرح کے کون سے ایشو کو حل کیا؟ ،ممبر قومی اسمبلی کی وجہ سے ایف آئی اے نے اپنے اختیارات کا غلط استعمال کیا، اگر ایف آئی اے نے ہتک عزت کے کیس دیکھنا شروع کردیئے تو باقی کام رہ جائیں گے۔

وکیل شاہ خاور نے کہاکہ ہتک عزت جس میں سائبر ایشو ہو وہاں ایف آئی اے مداخلت کر سکتی ہے، چیف جسٹس نے وکیل کو ہدایت کی کہ اچھا نہیں لگتا، بہتر یہی ہے کہ آپ اس معاملے کو حل کریں، چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ کنول شوزب کیک اور پھول لے کر ان کے پاس گئی تھیں ہم معاملے کا حل چاہتے ہیں۔

عدالت نے وکیل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہاکہ دو ہمسائیوں کا معاملہ ہے اچھا نہیں ہوا کہ ایشو یہاں تک پہنچ گیا، عدالت نے کنول شوزب کے خلاف مقدمہ درج کرنے سے روکنے کے حکم میں 27 جنوری تک توسیع کردی،عدالت نے فریقین کو مہلت دیتے ہوئے کیس کی مزید سماعت ملتوی کردی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں