اثاثہ جات کیس ، خواجہ آصف کے جسمانی ریمانڈ میں توسیع کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

لاہور.احتساب عدالت نے اثاثہ جات کیس میں خواجہ آصف کے جسمانی ریمانڈ میں نیب کی توسیع کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔

نجی ٹی وی اے آر وائی نیوز کے مطابق احتساب عدالت میں خواجہ آصف کیخلاف آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس کی سماعت ہوئی،نیب پراسیکیوٹر کی جانب سے مزید جسمانی ریمانڈ کی استدعاکی گئی، نیب پراسیکیوٹر نے کہاکہ خواجہ آصف کے اثاثے آمدن سے مطابقت نہیں رکھتے،خواجہ آصف کہتے ہیں یہ یو اے ای میں نوکری کرتے تھے ،خواجہ آصف کہتے ہیں کیش سیلری لے کر اکاﺅنٹس میں جمع کراتے تھے ۔

نیب پراسیکیوٹر نے کہاکہ خواجہ آصف نے اپنے ملازم طارق میرکے نام پر کمپنی بنائی ،51 کروڑ70 لاکھ روپے کی رقم کمپنی کے اکاو¿نٹ میں جمع کرائی گئی ۔

نیب نے کہاکہ 15 لوگوں نے مختلف اوقات میں رقوم اکاﺅنٹس میں جمع کرائیں ،جن لوگوں نے رقوم جمع کرائیں انہوں نے ہی رقم نکلوائی ،خواجہ آصف نے تسلیم کیا وہ کمپنی میں 50 فیصد کے حصہ دار ہیں،رقوم جمع کرانے والوں سے خواجہ آصف کے سامنے تفتیش کرناچاہتے ہیں ۔

عدالت نے کہاکہ اگرخواجہ آصف جواب نہیں توآپ آگے چلیں ۔

خواجہ آصف کی جانب سے فاروق ایچ نے وکالت نامہ جمع کرایا،فاروق ایچ نائیک نے کہاکہ خواجہ آصف کو نیب لاہور نے 5 نوٹس جاری کئے،نیب 13 روزہ جسمانی ریمانڈ میں صرف4 بار ملی ،فاروق ایچ نائیک نے کہاکہ جو دستاویز ہی نہیں وہ کہاں سے دی جائیں ،خواجہ آصف 2015 میں کمپنی چھوڑ چکے ہیں ،نیب کادائرہ اختیار قومی خزانے کونقصان پہنچانے پر ہی ہے ،آج تک نیب نے کرپشن کاکوئی الزام نہیں لگایا۔عدالت نے اثاثہ جات کیس میں خواجہ آصف کے جسمانی ریمانڈ میں نیب کی توسیع کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں